Your theme is not active, some feature may not work. Buy a valid license from stylothemes.com

دعا زہرا کیس ،سندھ ہائیکورٹ نے لڑکی کو عارضی طور پر والدین کے حوالے کر دیا

کراچی( نیوز ڈیسک) دعا زہرا کیس ،سندھ ہائیکورٹ نے لڑکی کو عارضی طور پر والدین کے حوالے کر دیا۔تفصیلات کے مطابق کم عمر بچی کے مبینہ اغوا سے متعلق کیس میں والدین کی جانب سے حوالگی کے کیس کی سماعت سندھ ہائیکورٹ میں ہوئی۔جسٹس اقبال کلہوڑو نے بچی کو بلا کر پوچھا کہ بیٹا آپ کا نام کیا ہے، جس پر لڑکی نے بتایا کہ میرا نام دعائے زہرا ہے، میں ساتویں کلاس میں پڑھتی تھی، عدالت میں میرے ماں باپ اور بہن موجود ہیں، میں والدین کے ساتھ جانا چاہتی ہوں۔وکیل ظہیر احمد نے کہا کہ بچی کو باہر لے جانے سے روکا جائے جس پر جسٹس اقبال کلہوڑو نے کہا کہ ہر کوئی ماں باپ کے گھر جانا چاہتا ہے، کوئی اپنے ماں باپ کا گھر نہیں چھوڑنا چاہتا، عدالتیں سب کے لیے کھلی ہوئی ہیں، بچی چھوٹی ہے والدین کے پاس جانا چاہتی ہے شیلٹر ہوم میں نہیں جانا چاہتی۔سندھ ہائیکورٹ نے بچی کو عارضی طور پر والدین کے ساتھ جانے کی اجازت دیتے ہوئے کہا کہ لڑکی کی مستقل حوالگی کا فیصلہ ٹرائل کورٹ نے کرنا ہے۔سندھ ہائیکورٹ نے بچی کی حوالگی کے لیے والدین کو 10 لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ چائلڈ پروٹیکشن آفیسر ہر ہفتے لیڈی ڈاکٹر کے ہمراہ لڑکی سے ملاقات کریں گی اور لڑکی سے ملاقات کے بعد رپورٹ ٹرائل کورٹ میں جمع کرائیں گی۔