صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے چیف ایگزیکٹو آفیسر یانسی سپرول کی قیادت میں آئی ٹی کمپنی ڈیجیٹل اوشن کے وفد کی ملاقات

اسلام آباد(نیوز ڈیسک )صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نےکہا ہے کہ پاکستان میں مربوط اور فعال آئی ٹی ماحول کی تشکیل کیلئے وفاقی اور صوبائی سطحوں پر اعلی سطح کے عزم کی ضرورت ہے ، حکومت ملک کے پورے تعلیمی نظام کا جائزہ لینے پر توجہ مرکوز کر رہی ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کو چیف ایگزیکٹو آفیسر یانسی سپرول کی قیادت میں آئی ٹی کمپنی ڈیجیٹل اوشن کے وفد سے ملاقات کے دوران کیا۔ اس موقع پر صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ پاکستان کے وژن کا محور ڈیجیٹل ٹرانسفارمیشن ٹیکنالوجی کی ترقی اور نمو کے لئے سازگار ماحول پیدا کرنا ہے، وژن میں آئی ٹی شعبے میں غیر ملکی سرمایہ کاری مدعو کرنا ، سرمایہ کاروں کو سہولت فراہم کرنا اور نوجوانوں کی حوصلہ افزائی شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں مربوط اور فعال آئی ٹی ماحول کی تشکیل کیلئے وفاقی اور صوبائی سطحوں پر اعلی سطح کے عزم کی ضرورت ہے ، صحیح وقت پر درست فیصلے کرنے اور پالیسیوں اور فیصلوں کو ٹائم لائن کی بنیاد پر نافذ کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کی حوصلہ افزائی ، سرمایہ کاری کے ماحول کو مزید بہتر بنا نے کی ضرورت ہے ، نوجوانوں کو معیاری آئی ٹی مہارتیں فراہم کر کے پاکستان کی آئی ٹی برآمدات بہتر بنائی جا سکتی ہیں، ہمارے نوجوانوں کی بڑی تعداد پہلے ہی آئی ٹی کے شعبے کی ترقی میں اپنا کردار ادا کر رہی ہے ۔ صدر مملکت نے کہا کہ بیوروکریسی سرمایہ کاروں کی مدد کرے ،اپنے دروازے کھلے رکھے، سرمایہ کاروں کا خیرمقدم کرے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ملک کے پورے تعلیمی نظام کا جائزہ لینے پر توجہ مرکوز کر رہی ہے ، گریجویٹس کو مارکیٹ پر مبنی علم، تکنیک اور ہنر فراہم کر کے نظام کومارکیٹ کی ضروریات کے مطابق تبدیل کیا جائے گا۔ صدر مملکت نے 350 ملین ڈالر میں ایک پاکستانی آئی ٹی کمپنی حاصل کرکے پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے پر کمپنی کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل اوشن کو نوجوانوں کو اعلی معیار کی تربیت فراہم کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات کرنے چاہئیں ، ڈیجیٹل اوشن کے سی ای او یانسی سپرول نے صدر کو ڈیجیٹل اوشن، ترقی کی حکمت عملی، مستقبل کی سرمایہ کاری اور کراچی میں کاروباری حجم کو تین گنا کرنے کے بارے میں آگاہ کیا۔ وفد نے خاص طور پر توجہ کے مستحق سماجی اثرات کے شعبوں پر بھی خیالات کا تبادلہ کیا۔