600 افراد پر مشتمل پروفیشنلز کی پہلی کھیپ بیرون ممالک روانہ

اسلام آباد(نیوزڈیسک)وفاقی حکومت کے زیر اہتمام 600 تربیت یافتہ پروفیشنل افراد کی پہلی کھیپ بیرون ملک روانہ ہوگئی۔مذکورہ پروفیشنل افراد اسلام آباد، کراچی، لاہور، پشاور سے قطر، بحرین، سعودی عرب روانہ ہوگئے۔600 گورنمنٹ سپانسرڈ پروفیشنلز کی پہلی کھیپ کام کے لیے بیرون ملک روانہ۔پاکستان کی افرادی قوت ، وزارتِ خارجہ ، وزارتِ سمندر پار پاکستانیوں کے تعاون سے پروفیشنل افراد کی پہلی کھیپ کی بیرون ملک ملازمت کے لیے روانگی میں کامیابی سے سہولت فراہم کی ہے۔


یہ کامیابی وزارت خارجہ کے حکام کے قطر، بحرین، سعودی عرب اور یورپی ممالک کے نتیجہ خیز اور کامیاب دوروں کے سلسلے کے بعد حاصل ہوئی ہے، جس کے نتیجے میں ہنر مند افراد کے لیے روزگار کے مواقع کی بہتات ہے۔10,000سے زیادہ انٹرویوز کے بعد 600 امیدواروں کو مختلف بین الاقوامی ملازمتوں کے لیے منتخب کیا گیا۔ پاکستان کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے یہ افراد اسلام آباد، کراچی، لاہور اور پشاور کے بڑے ہوائی اڈوں سے قطر، بحرین اور سعودی عرب میں روزگار کے مواقع کیلئے روانہ ہوئے۔

اس کوشش کی کامیابی کا سہرا وزارت خارجہ اور وزارت سمندر پار پاکستانیوں کی مشترکہ کاوشوں کو قرار دیا جا سکتا ہے جو نومبر سے غیر ملکی آجروں کے ساتھ سرگرم عمل ہیں۔ بین الاقوامی کانفرنسوں، نمائشوں اور مشترکہ اجلاسوں میں شرکت کے ذریعے، پاکستان ایسے معاہدوں کو حاصل کرنے میں کامیاب رہا جن کے باعث توقع ہے کہ ہفتے کے آخر تک مزید ایک ہزار تک افراد کو بیرون ممالک ملازمتیں مل جائیں گی.

وزارت سمندر پار پاکستانیوں نے 600 افراد کو معاہدوں پر دستخط کرکے بیرون ملک کام کرنے کی سہولت فراہم کی۔جواد سہراب ملک نے مزید روشنی ڈالی کہ بیرون ملک ملازمت کے مواقع کسی خاص مہارت کی سطح تک محدود نہیں ہیں، کیونکہ پیشہ ور افراد، انتہائی ہنر مند کارکن، نیم ہنر مند مزدور اور غیر ہنر مند افرادی قوت سبھی بیرون ملک روزگار کے مواقع تلاش کر رہے ہیں۔

مزید برآں، صحت، انجینئرنگ، آئی ٹی، مہمان نوازی، مالیات اور تعمیرات جیسے شعبوں پر توجہ پاکستانی کارکنوں کے لیے دستیاب مختلف مواقع کی عکاسی کرتی ہے۔چونکہ پیشہ ور افراد کی پہلی کھیپ بیرون ملک اپنے سفر کا آغاز کر رہی ہے، امید ہے کہ یہ اقدام نہ صرف افراد اور ان کے خاندانوں کو معاشی استحکام فراہم کرے گا بلکہ پاکستان کی افرادی قوت کی مجموعی ترقی اور ترقی میں بھی معاون ثابت ہوگا۔ افق پر مزید معاہدوں کے ساتھ، حکومت اپنے شہریوں کے لیے روزگار کے مواقع فراہم کرنے اور عالمی سطح پر اپنی ہنر مند لیبر فورس کی صلاحیت کو بروئے کار لانے کے لیے پرعزم ہے۔