ای روز گار کے میدان میں انقلاب،حکومت کا تاریخی اقدام

اسلام آباد ( اے بی این نیوز    )اسلام آباد میں پاکستان کے پہلے ای روزگار سنٹر کا افتتاح کر دیا گیا۔ حکومت نے مستقبل میں ورک سٹیشنوں کی تعداد 300 تک بڑھانے کا منصوبہ بنایا ہے۔افتتاحی تقریب میں ایڈیشنل سیکرٹری ایم او آئی ٹی ٹی عائشہ موریانی، ممبر آئی ٹی سید جنید امام، پراجیکٹ ڈائریکٹر عامر احمد، چیئرمین ای سی سروسز نذیر قریشی، ایم او آئی ٹی ٹی، این ٹی ایس، پی ایس ای بی کے حکام اور فری لانسرز کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے آئی ٹی کے وزیر نے کہا کہ پہلے سنٹر کے آغاز کے ساتھ ہی

مزید پڑھیں :پانی میں سونا موجود ،گلگت سے تعلق رکھنے والے ایک قبیلے کا روزگار کیا ہے اور لوگ کیسے اس سونے کا استعمال کرتے ہیں؟

ملک بھر میں 10,000 ای روزگار مراکز کے قیام کا منصوبہ باضابطہ طور پر شروع ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہا، “ہم نے لوگوں سے کیا گیا ایک اور وعدہ بھی پورا کیا ہے، جہاں موجودہ 1.5 ملین اور آنے والے نئے فری لانسرز میں سے ایک قابل ذکر تعداد بہت کم شرحوں پر آزادانہ طور پر کام کر سکتی ہے۔”وزیر نے کہا کہ فری لانسرز کو تیز رفتار انٹرنیٹ، بلاتعطل بجلی کی فراہمی، تربیتی مراکز، انفرادی کیبن، میٹنگ روم اور اسٹارٹ اپس کے لیے علیحدہ دفتری کمرے فراہم کیے گئے ہیں۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ اس منصوبے کی تکمیل سے ملک کی آئی ٹی برآمدات سالانہ 10 ارب ڈالر تک پہنچ جائیں گی۔ انہوں نے کہا، پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ (پی ایس ای بی) ان مراکز کے لیے فری لانسرز اور درکار تکنیکی مدد فراہم کرنے کا ذمہ دار ہوگا۔