شیرافضل یا علی ظفرکو کوئی غلط فہمی ہوئی، عمران خان ہی پارٹی چیئرمین ہیں، لطیف کھوسہ

راولپنڈی(نیوزڈیسک)عمران خان کے وکیل لطیف کھوسہ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے مائنس ون خبروں کی سختی سے تردید کردی، عمران خان ہی چیئرمین ہیں وہی رہیں گے۔اڈیالہ جیل کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے لطیف کھوسہ کا کہنا تھا میری چیئرمین پی ٹی آئی کیساتھ طویل ملاقات ہوئی جس میں انہوں نے مائنس ون کی خبروں کی تردیدکردی ، انٹرا پارٹی الیکشن میں پی ٹی آئی کے موجودہ چیئرمین امیدوار ہوں گے، پی ٹی آئی کے چیئرمین جو ہیں وہی رہیں گے۔ان کا کہنا تھا چیئرمین پی ٹی آئی سے ایک ڈیڑھ گھنٹہ بات ہوئی جس میں انہوں نے دو ٹوک بات کی، شیر افضل مروت یا علی ظفر نے جو کہا ان کو شاید غلط فہمی ہوئی ہے۔عمران خان کے وکیل لطیف کھوسہ کا کہنا تھا خاور مانیکا کے بیان پر چئیرمین پی ٹی آئی کو تکلیف ہوئی کہ کوئی اتنا بھی گر سکتا ہے، چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ کوئی اتنا جھوٹ بھی بول سکتا ہے، سیاست میں سب ہوتا ہے،کیسز بنا دیے جاتے ہیں لیکن کوئی اتنا گرسکتا ہے۔عمران خان کے وکیل کا کہنا تھا سابق وزیراعظم کی شادی کو 6 سال ہو گئے، خاور مانیکا کو2 ماہ پابند سلاسل رکھا گیا، جج کے سامنے بیان پر خاورمانیکا لکھا ہوا کاغذ پڑھ رہے تھے، انہیں لکھا ہوا کاغذ دیا گیا، خاورمانیکا کو 6 سال بعد یاد آگیا کہ یہ عدت میں شادی ہوئی ہے۔یاد رہے کہ گزشتہ روز چیئرمین پی ٹی آئی کے وکیل شیر افضل مروت نے کہا تھا کہ عمران خان پارٹی کے انٹرا پارٹی الیکشن سے دستبردار ہو گئے ہیں تاہم پاکستان تحریک انصاف کے سوشل میڈیا پیج پر شیر افضل مروت کی خبر کی تردید کی گئی تھی۔